Islamic Poetry | Best Islamic Poetry in Urdu with Pics

500+ Sher of Islamic Poetry or Islamic Shayari with images. Read and share your favorite Urdu Islamic Poetry with Family, Friends and on social media Like Facebook, Twitter, Instagram etc.

islamic poetry in urdu

Islamic Poetry in Urdu

Zamane Ka Sahara Tu Bzahar Ik Dikhawa Hai
Haqeqat Main Muje Mera Khuda Girne Nahi Deta

زمانے کا سہارا تو بظاہر اِک دکھاوا ہے
حقیقت میں مجھے میرا خدا گرنے نہیں دیتا

islamic shayari urdu

Islamic Shayari Urdu

Toheed Tu Ye Hai k KHUDA Hashar mein Keh De
Ye Banda Zamane se Khafa Mere Liye Hai

توحید تو یہ ہے کہ خدا حشر میں کہ دے
یہ بندہ زمانے سے خفا میرے لیے ہے

islamic poetry help poors

Islamic Poetry – Help Poor’s

Main Kese Man Loon Ke Koi Mera Nahi Raha
Jab Tak Khuda Ki Zaat Hai Tanha Nahi Hoon Main

میں کیسے مان لوں کہ کوئی میرا نہیں رہا
جب تک خدا کی زات ہے تنہا نہیں ہوں میں

tauba shayari

Tauba Shayari

Tauba Ki Umeed Per Ho Chuke Bahut Gunaah Ya Rab,
Mohlat Toh Mil Rahi Hai Taufeeq Bhi Ataa Ker

توبہ کی اُمید پر ہوچکے بہت گناہ یارب
مہلت تو مل رہی ہے توفیق بھی عطا کر

islamic poetry urdu

Muafi Islamic Poetry Urdu

Hum Roz Gunah Kerty Hain, Wo Chopata Ha Apni Rehmat Se
Hum Mjaboor Apni Adat Se, Woh Mashhoor Apni Rehmat Se

ہم روز گناہ کرتے ہیں، وہ چھپاتا ہے اپنی رحمت سے
ہم مجبور اپنی عادت سے، وہ مشہور اپنی رحمت سے

sajda shayari urdu

Sajda Shayari in Urdu

Qyamat Tak Sajde Mai Rhe Sar Mera Ae Khuda
K Teri Namton K Shukar Ke Liye Ye Zindagi Kafi Nahi

قیامت تک سجدے میں رہے سَر میرا اے خدا
کہ تیری نعمتوں کے لیے یہ زندگی کافی نہیں

islami shayari sms

Islami Poetry SMS

Kuda Ki Rahmat Main Kuch Na Faraq Dekh
Sare Zamane Ko Main Ne Perakh Dekha

خدا کی رحمت میں کچھ نہ فرق دیکھا
سارے زمانے کو میں نے پرکھ دیکھا

hijab islamic poetry

Hijab Islamic Poetry

Band-e-Parwar Hijab Lazim Hai,
Her Nazar Paarsa Nahi Hoti.

بندہِ پرور حجاب لازم ہے
ہر نطر پارسا نہیں ہوتی

ramadan poetry urdu

Ramadan Poetry Urdu

Be-Zubanon Ko Jab Wo Zaban Deta Hai
Parhne Ko Phir Woh Quraan Deta Hai

Bakhshne Pe Aaye Jab Ummat Ke Gunahon Ko
Tohfe Mein Gunahgaron Ko Ramzan Deta Hai

بے زبانوں کو جب وہ زبان دیتا ہے
پڑھنے کو پھر وہ قرآن دیتا ہے

بخشنے پہ آئے جب امت کے گنا ہوں کو
تحفے میں گناہگاروں کو رمضان دیتا ہے

—————————-

Jhukte Hain Daanish Jahan Zamane Ke Baadshah
Kabhi Tu Dekh Lon Main Wo Darbar-e Mustafa

جھکتے ہیں دانش جہاں زمانے کے بادشاہ
کبھی تو دیکھ لوں میں وہ دربارے مصطفیٰ

Khuda Se Mang Jo Kuch Maangna Hai Akbar
Yehi Wo Dar Hai Ke Zillat Nahi Sawal Ke Bad

خدا سے مانگ جو کچھ مانگنا ہے اکبر
یہی وہ دربار ہے کہ زلت نہیں سوال کے بعد

Is Khak Ko Hdyat De Mola
Us Khak Me Milne Se Pehle

اِس خاک کو ہدایت دے مولا
اس خاک میں ملنے سے پہلے

Aankh Ashkbaar Sahi, Dil Yeh Guneh-gaar Sahi
Bandah To Tera Hon, Bandah Yeh Khata-kaar Sahi

آنکھ اشک بار سہی، دل یہ گنہگار سہی
بندہ تو تیرا ہوں، بندا یہ خطا کار سہی

Mumkin Nahi Muj Se Ye Tarz-e Munafaqt
Dunya Tere Mazaj Ka Banda Nahi Hoon Main

ممکن نہیں مجھ سے یہ طرزِ منافقت
دنیا تیرے مزاج کا بندہ نہیں ہوں میں

Lazzat-e-Gunah Ki Khatir Jis Ne Haar Di Thi Jannat
Meri Ragoon Main Bhi Tu Ussi Aadam Ka Khoon Hai

لزتِ گناہ کی خاطر جس نے ہار دی تھی جنت
میری رگوں میں بھی اُسی آدم کا خون ہے

Soda Gari Nahi Ye Ibadat Khuda Ki Hai
Ae Be-Khabar Jaza Ki Tamana Bhi Chor De

—————————-

Islamic Poetry of Allama Iqbal

islamic poetry allama iqbal

Islamic Poetry of Allama Iqbal

Mery Bachpan Ky Den B Kia Khob Thy Iqbal
Bay Namazi B Tha Or By Guna Bhi

سودا گری نہیں یہ عبادت خدا کی ہے
اے بے خبر جزا کی تمنا بھی چھوڑ دے

allama iqbal for children

Allama Iqbal Poetry For Children

Mere Bachpan Ke Din Bhi Kia Khub The Iqbal
Be Nimazi Bhi Tha Aur Be Gunah Bhi

میرے بچپن کے دن بھی کیا خو ب تھے اقبالؔ
بے نمازی بھی تھا اور بے گناہ بھی

—————————-

Har Lehza Hai Monin Ki Nai Shaan Nai Aan

ہر لحظہ ہے مومن کی نئی شان، نئی آن​
گفتار میں، کردار میں، ﷲ کی برہان

قہاری و غفاری و قدوسی و جبروت​
یہ چار عناصر ہوں تو بنتا ہے مسلمان​

ہمسایہء جبریلِ امیں، بندہء خاکی​
ہے اس کا نشیمن نہ بخارا نہ بدخشان​

یہ راز کسی کو نہیں معلوم کہ مومن​
قاری نظر آتا ہے، حقیقت میں ہے قرآن

قدرت کے مقاصد کا عیار اس کے ارادے​
دنیا میں بھی میزان، قیامت میں بھی میزان​

جس سے جگرِ لالہ میں ٹھنڈک ہو، وہ شبنم​
دریاؤں کے دل جس سے دہل جائیں، وہ طوفان​

فطرت کا سرودِ ازلی اس کے شب و روز​
آہنگ میں یکتا، صفتِ سورہء رحمٰن​

بنتے ہیں مری کارگہِ فکر میں انجم​
لے اپنے مقدّر کے ستارے کو تو پہچان

Add Comment

x