Allama Iqbal Poetry in Urdu, English with Beautiful Images

 Allama Iqbal Love Poetry

allama iqbal love poetry

Allama Iqbal Love Poetry

فدا کرتا رہا دل کو حسنیوں کی ادائوں پر
مگر دیکھی نہ اس آئینے میں اپنی ادا تو نے

Fida kerta rha dil ko hasinon ki adaon per,
Magar dekhi na us aaine men apni ada tu ne.

ذرا سی بات تھی ، اندیشہ عجم نے
اسے بڑھا دیا ہے فقط زیب داستاں کے لیے

Zara si baat thi, andesha ajam ne,
Ise barha dia hai, faqat zaib-e-dastan ke ley.

—————————–

محبت ہی سے پائی ہے شفا بیمار قوموں نے
کیا ہے اپنے بخت خفتہ کو بیدار قوموں نے

Muhabat hi se pai ha shifa bemar qumon ne,
Kia ha apne bakht khifta ko bidar qumon ne.

—————————–

جفا جو عشق میں ہوتی ہے وہ جفا ہی نہیں
ستم نہ ہو تو محبت میں کچھ مزا ہی نہیں

Jafa jo ishaq main hoti ha who jafa hi nahi,
Sitam na ho tu muhabat main kuch maza hi nahi.

—————————–

ترے عشق کی انتہا چاہتا ہوں
مری سادگی دیکھ کیا چاہتا ہوں

Tere ishaq ki inteha chahta hon,
Meri sadgi dekh kia chahta hon.

بھری بزم میں راز کی بات کہہ دی
بڑا بے ادب ہوں ، سزا چاہتا ہوں

Bheri bazam main raz ki bat keh di,
Bara be adab hon saza chahta hon.

—————————–

برا سمجھوں انھیں مجھ سے تو ایسا ہو نہیں سکتا
کہ میں خود بھی تو ہوں اقبال اپنے نکتہ چینوں میں

Bura samjon unahin mujh se tu aisa ho nahi sakta,
Kh mian khud bhi tu hon Iqbal apne nukta cheeno main.

—————————–

خدا سے حسن نے اک روز یہ سوال کیا
جہاں میں کیوں نہ مجھے تو نے لازوال کیا

Khuda se husan ne aik roz ye swal kia,
Jahan mian kion na mujhe tu ne lazwal kia.

ملا جواب کہ تصویر خانہ ہے دنیا
شب دراز عدم کا فسانہ ہے دنیا

Mila jawan kh tasweer khana ha duniya,
Shab-e-daraz adam ka fasana ha duniya.

—————————–

Add Comment

x