50+ Father Poetry in Urdu 2 Lines | Sad Love Baap Shayari

Find here best Father Poetry in Urdu that are Love with Daugther, Love with Son, Baap shayari sms, Father Day Quotes with beautiful pics. Read and share with your Father, Friends, Family or on social media

father poetry in urdu

Father poetry in urdu

اُن کے سائے میں بخت ہوتے ہیں

باپ گھر میں درخت ہوتے ہیں

Un kay saye main bakht hotay hain

Baap gher main daratht hotay hain

baap ki yaad poetry

Baap ki yaad poetry

عزیز تر وہ مُجھے رکھتا تھا ، رگِ جاں سے

یہ بات سچ ہے ، میرا باپ کم نہ تھا میری ماں سے

Aziz tarr wo mujhay rakhta tha, rag-e-jan say

Yeh baat sach hay, mera baap kam na tha meri maan say

sad father poetry

Sad father poetry

پکڑ کے ہاتھ اُس نے ہاتھ مجھے گھر سے نکالا ہے

پکڑ کے ہاتھ جس کا میں نے چلنا سکھایا تھا

Pakar Ke Hath Us Ne Hath Mujhy Ghar Se Nikala hai

Pakar Ke Hath Jis Ka Main Ne Chalna Sikhaya Tha

baap shayari urdu

Baap shayari urdu

گھر جا کے چپکے سے بچوں کو کھلایا ہو گا

اُن کو کیا معلوم کہ کِس حال میں کمایا ہوگا

Ghar ja kay chupkay say bachon ko khilaya ho ga

Un ko kiya maloom keh kis haal main kamaya ho ga

father love poetry

Father love poetry

میں نہیں جانتا بادشاہ کیسا ہوتا ہے

میرے خیال میں میرے باپ جیسا ہوتا ہے

Main nahi janta badshah kesa hota hai

Mere khayal mein mere baap jaisa hota hai

father death poetry

Father death poetry

یتیمی ساتھ لاتی ہے زمانے بھر کے دُکھ

سُنا ہے باپ زندہ ہو تو کانٹے بھی نہیں چُبھتے

Yateemi sath lati hai zamanay bhar kay dukh

Suna hai baap zinda ho tu kantay bhi nahi chubhtay

dad poetry urdu

Dad poetry urdu

مجھ کو چھاوں میں رکھا اور خود جلتا رہا دھوپ میں

میں نے دیکھا اِک فرِشتہ باپ کے روپ میں

Mujh ko chaoon main rakha aur khud jalta raha dhoop main

Main nay dekha ik farishta baap kay roop main

baap sad shayari

Baap sad shayari

بوجھ اینٹوں کا اور بڑھا دو صاحب

میرے بچے نے آج اِک فرمائش کی ہے

Bojh enton ka barrah do sahib

Mery bachay nay aaj ik farmaish ki hai

__________________

مجھ کو تھکنے نہیں دیتا ضرورت کا پہاڑ

میرے بچے مجھے بُوڑھا ہونے نہیں دیتا

Mujhko Thakne Nahi Deta Zarurat Ka Pahaar

Mere Bachy Mujy Burah Hone Nahi Dete

__________________

کندھوں پہ میرے جب بوجھ بڑھ جاتے ہیں

میرے بابا مُجھے شِدت سے یاد آتے ہیں

Kandhon pay meray jab bojh barrh jaatay haan

Meray baba mujhay shiddat say yaad aatay haan

__________________

جو موت سے نہ ڈرتا تھا ، بچوں سے ڈر گیا

اِک رات خالی ہاتھ جب مزدور گھر گیا

Jo maut say na darta tha bachon say dar giya

Ik raat khali hath jab mazdoor ghar giya

__________________

پیکر تھَا وَفا کا مُحبت کا خُدا تھَا

وُہ شَخص زَمانے میں سَب سے جُدا تھَا

Paikar tha wafa ka muhabbat ka khuda tha

Wo shakhs zamanay main sab say juda tha

__________________

جو باپ کی ٹھنڈی چھاوں میں گُزرے تھے

زِندگی کے وہی پَل اَنمول تھے

Jo baap ki thandi chaon main guzray thay

Zindagi kay wahi pal anmol thay

__________________

میرے بچے انگلی تھامے دھیرے دھیرے چلتے تھے

پھر وہ آگے دوڑ گئے میں تنہا پیچھے چھوٹ گیا

Meray bachay ungli thamay dheeray dheeray chaltay thay

Phir wo aagay daur gaye main peechay tanha choot giya

__________________

father day poetry urdu

Father’s day poetry urdu

Father’s Day Poem

فادر ڈے کے حوالہ سے نظم

عزیز تر وہ مُجھے رکھتا تھا ، رگِ جاں سے

یہ بات سچ ہے ، میرا باپ کم نہ تھا میری ماں سے

Aziz tarr wo mujhay rakhta tha, rag-e-jan say

Yeh baat sach hay, mera baap kam na tha meri maan say

وہ ماں کے کہنے پہ کچھ روعب مجھ پہ رکھتا تھا

یہی وجہ تھی کہ مجھے چومتے ججھکتا تھا

Wo maan kay kehnay pey kuch raub mujh pay rakhta tha

Yahi waja thi kay mujhay choomtay jhijhakta tha

وہ آشنا میرے ہر کرب سے رہا ہر دم

جو کھل کے رو نہیں پایا مگر سسکتا تھا

Wo ashna meray har karb say raha har dam

Jo khul kay roo nahi paya, magar sisakta tha

جڑی تھی اسکی ہر اک ہاں فقط میری ہاں سے

یہ بات سچ ہے میرا باپ کم نہ تھا ماں سے

Jurri thi uski har ik haan faqt meri haan say

Yeh baat sach hay mera baap, kam na tha maan say

ہر اک درد وہ چپ چاپ خود پہ سہتا تھا

تمام عمر وہ اپنوں سے کٹ کے رہتا تھا

Har aik dard wo chup chap khud pay sehta tha

Tamam umer wo apnoon say kat keh rehta tha

وہ لوٹتا تھا کہیں رات کو دیر سے کہ دن بھر

وجود اسکا پسینے میں ڈھل کے بہتا تھا

Woh laut-ta tha kahin raat ko dair say keh din bhar

Wajod uska paseenay main dhal kay behta tha

گلے پھر بھی تھے مجھے ایسے چاک داماں سے

یہ بات سچ ہے میرا باپ کم نہ تھا ماں سے

Gillay phir bhi thay mujhy aisay chak daman say

Yeh baat sach hay mera baap, kam na tha maan say

پرانا سوٹ پہنتا تھا کم وہ کھاتا تھا

مگر کھلونے میرے سب خرید لاتا تھا

Purana suit pehanta tha kam wo khata tha

Magar khilonay meray sab khareed lata tha

وہ مجھے سوئے ہوئے دیکھتا تھا جی بھر کے

نہ جانے سوچ کے وہ کیا کیا مسکراتا تھا

Wo mujhay soo-ay huwy dekhta tha jee bhar kay

Na janay soch kay wo kiya kiya muskrat tha

میرے بغیر تھے سب خواب اسکے ویراں سے

یہ بات سچ ہے میرا باپ کم نہ تھا ماں سے

Meray baghar thay sab khwab uskay veran say

Yeh baat sach hai mera baap kam na tha maan say

__________________

father daughter love poetry

Father daughter love poetry

Poem That Dedicated To Father’s Day 

Nazam Paikar Tha Wo Wafa Ka

پیکر تھَا وَفا کا مُحبت کا خُدا تھَا

وُہ شَخص زَمانے میں سَب سے جُدا تھَا

Paker tha wo wafa ka muhabbat ka khuda tha

Wo shakhs zamanay main sab say juda tha

چاہَت کے خَزانے تھے ہَر اِک لَفظ میں اُس کے

دَامَن میرا اُس نے دُعّاوں سے بَھرا تھَا

Chahat kay khazanay thay har ik lafz main us kay

Daman mera us nay duaoon say bhara tha

مُجھ کو نَہیں دیکھا کڑی دھُوپ نے چُھو کَر

بابا میرا دُنیا میں مُجھے ایسا جو مِلا تھَا

Mujh ko nahi dekha karri dhoop nay choo kar

Baba mera duniya main mujhay aisa ja mila tha

فِکریں نہ زَمانے کی کبھی پاس بھی آئیں

میرا  درد میری ہستی سے ڈرتا ہی رہا تھَا

Fikarain na zamanay ki kabhi pass bhi aain

Mera dard meri hasti say, darta hi raha tha

جَب تَک رَہا سَانسوں کا بسیرا  میرا  بابا

تَب تَک میں غَموں سے بچا ہی رہا تھَا

Jab tak raha sanson ka basera mera baba

Tab tak main ghamon say, bacha hi raha tha

اُس شَام کی حِدّت میرے دِل سے نہیں جَاتی

جِس شَام تیرا سَایہ میرے سَر سے اُٹھا تھَا

Uss sham ki hiddat meray dil say nahi jati

Jis sham tera saya meray sar say utha tha

__________________

Add Comment