Aansu Shayari Urdu 2 Lines | Aaankhon Mein Aansu Poetry

If you are looking for aansu poetry, you can find it here. When a person falls in love with someone, when he leaves, the person becomes very sad and tears come out of his eyes. It seems that man has lost everything and it is difficult for him to live. So in such cases, aansu shayari helps to reduce your sadness and he is able to change his thoughts.

Aansu poetry urdu

Aansu poetry urdu

اُس کی آنکھوں کا پھیلتا کاجل
میرے شکوے بہا گیا سارے

Uski Aankhon Ka Phailta Kajal
Mere Shikwe Baha Gaya Saare

⇔⇔⇔⇔⇔

وہ پوچھتے ہیں دلِ مبتلا کا حال اور ہم
جواب میں فقط آنسو بہائے جاتے ہیں

Wo Pochty Hain Dil-E-Mubtala Ka Haal Aur Hum
Jawab Main Faqat Ansoo Bahaye Jaty Hain

⇔⇔⇔⇔⇔

Aansu shayari 2 lines

Aansu shayari 2 lines

ایک آنسو نے ڈبویا مجھ کو اُن کی بزم میں
بوند بھر پانی سے ساری آبرو پانی ہوئی

Ek Ansoo Ne Daboia Mughkko Un Ki Bazam Main
Bond Bhar Pani Say Sari Aabru Pani Hoi

⇔⇔⇔⇔⇔

کوئی بادل ہوتو تھم جائے مگر اشک میرے
ایک رفتار سے دن رات برابر برسے

Koi Badal Ho To Tham Jaye Magar Ashk Mery
Ek Rafter Say Din Rat Brabar Barsy

⇔⇔⇔⇔⇔

Tears poetry in urdu

Tears poetry in urdu

ٹپک پڑتے ہیں آنسو جب اپنوں کی یاد آتی ہے
یہ وہ برسات ہے کہ جس کا کوئی موسم نہیں ہوتا

Tapak Parte Hain Aansu Jab Apno Ki Yaad Aati Hai
Yeh Woh Barsaat Hai Ke Jiska Koi Mausam Nahi Hota

⇔⇔⇔⇔⇔

جب میری ذات سے جی بھر جائے تو بتا دینا
میں آنکھ سے آنسو کی طرح خود ہی نکل جاؤں گا

Jab Meri Zaat Se Jee Bhar Jaye Toh Bata Dena
Main Aankh Se Aansu Ki Tarah Khud Hee Nikal Jaunga

⇔⇔⇔⇔⇔

Rona shayari

آنسو ہمارے گِر گئے اُن کی نگاہ سے
اُن موتیوں کی اب کوئی قیمت نہیں رہی

Ansu Hamary Gir Gaye Unki Nigah Say
Un Motiyon Ki Ab Koi Qeemat Nahi Rahi

⇔⇔⇔⇔⇔

اُداس آنکھوں سے آنسو نہیں نکلتے ہیں
یہ موتیوں کی طرح سِپیوں میں پلتے ہیں

Udas Ankhon Say Ansoo Nahi Nikalty Hain
Ye Motiyon Ki Terhan Sipiyon Main Palty Hain

⇔⇔⇔⇔⇔

میں اک آنسو ہی سہی ہوں بہت انمول مگر
یوں نہ پلکوں سے گرا کر مجھے مٹی میں ملا

Main Ek Ansoo Hee Sahee Hun Bahut Anmol Magar
Yun NA Palkon Se Gira Kar Mujhe Mati Mein Mila

⇔⇔⇔⇔⇔

Kia kahon kis tarha se jeeta hon

کیا کہوں کس طرح سے جیتا ہوں
غم کو کھاتا ہوں آنسو پیتا ہوں

Kiya Kahon Kis Terhan Say Jeeta Hon
Gham Ko Khata Hon Ansoo Peta Hon

⇔⇔⇔⇔⇔

رکھ نہ آنسو سے وصل کی اُمید
کھارے پانی سے دال گلتی نہیں

Rakh Na Ansoo Say Wasal Ki Umeed
Kharay Panisay Daal Galti Nahi

⇔⇔⇔⇔⇔

ویسے تو ایک آنسو ہی مجھے بہا کر لے جائے
ایسے کوئی طوفان ہلا بھی نہیں سکتا

Wesy To Aik Ansoo He Mughe Baha Kar Lay Jaye
Esy Koi Toofan Hila Bhi Nahi Sakta

⇔⇔⇔⇔⇔

Shayari on tears in urdu

Shayari on tears in urdu

گُلاب سے خوشبو کو فنا کون کرے گا
پلکوں سے آنسووں کو جُدا کون کرے گا

Ghulab Say Khusbu Ko Fana Kon Kary Ga
Palkon Say Ansoon Ko Juda Kon Kary Ga

⇔⇔⇔⇔⇔

اُس نے چھو کر مجھے پتھر سے پھر انساں کیا
مدتوں بعد میری آنکھوں میں آنسو آئے

Us Nay Chu Kar Mughe Pathar Say Phir Insan Kiya
Mudaton Baad Meri Ankhon Main Ansoo Aaye

⇔⇔⇔⇔⇔

ہم رونے پے آجائیں تو دریا ہی بہا دیں
شبنم کی طرح سے ہمیں رونا نہیں آتا

Hum Rone Pe Aa Jayein Toh Dariya Hee Baha Dein
Shabnam Ki Tarah Se Humein Rona Nahi Aata

⇔⇔⇔⇔⇔

Read More: Udas Poetry in Urdu

Add Comment