Home / Muharram Poetry / Karbala Poems | Muharram Poems in Urdu

Karbala Poems | Muharram Poems in Urdu

Karbala Poems in Urdu 

Ahle Bait Poem

(1)

karbala poems in urdu

Karbala Poems | Muharram Poems

باغ جنت کے ہیں بہرِ مدح خوان ِاہلبیت
تم کو مژدہ نار کا اے دشمنانِ اہلبیت

Baghe Jannat Ke Hain behre madha khan-e-Ahle Bait
Tum ko mujda naar ka aye dushmanan-e-Ahle Bait

کس زباں سے ہو بیانِ عز و شانِ اہلبیت
مدح گوئے مصطفے ہے مدح خوانِ اہلبیت

Kis zaban se ho bayan izzo shane-e-Ahle Bait
Madha goe Mustafa hai,madha Khan-e-Ahle Bait

ان کی پاکی کا خدائے پاک کرتا ہے بیاں
آیہء تطہیر سے ظاہر ہے شانِ اہلبیت

Unki paki ka Khuda-e-pak karta hay bayan
Aya-e-Tatheer se zahir hay Shan-e-Ahle Bait

مصطفے عزت بڑھانے کے لیے تعظیم دیں
ہے بلند اقبال تیرا دودمانِ اہلبیت

Mustafa izzat badhane kay liye tazeem dein
He buland iqbal tera Doodman-e-Ahle Bait

karbala poems poetry

Karbala Poems | Muharram Poems

ان کے گھر بھی اجازت جبریل آتے نہیں
قدر والے جانتے ہیں قدر و شانِ اہلبیت

Inke ghar mein be ijazat Jibrael aate nahi
Qadr wale jante hain qadr shane-e-Ahle Bait

رزم کا میدان بنا ہے جلوہ گاہِ حسن و عشق
کربلا میں ہو رہا ہے امتحانِ اہلبیت

Razm ka maidan bana hay jalwa gahe Husn-o-Ishq
Karbala main ho raha Imtehan-e-Ahle Bait

پھول زخموں کے کھلائے ہیں ہوائے دوست نے
خون سے سینچا گیا ہے گلستانِ اہلبیت

Phool zakhmo kay khilae hai Hawae dost nay
Khoon say seencha gaya hai Gulsatan-e-Ahle Bait

حوریں کرتی ہیں عروسانِ شہادت کا سنگار
خوبرو دولھا بنا ہے ہر جوانِ اہلبیت

Hoorein karti hain aroosan e shahadat ka singhar
Khuburu dulha aana he har Jawan-e-Ahle Bait

muharram poems

Karbala Poems | Muharram Poems

ہو گئی تحقیقِ عید، دیدِ آبِ تیغ سے
اپنے روزے کھولتے ہیں صائمانِ اہلبیت

Ho gai tehqeeq eid e deed Ab-e-Taigh se
Apne roze kholte hain Sa’iman-e-Ahle Bait

جمعہ کا دن ہے کتابیں زیست کی طے کر کے آج
کھیلتے ہیں جان پر شہزادگانِ اہلبیت

Jumma ka din hay kitab-ezeest kit eh kar kay aaj
Khailty hay jan par Shezadgan-e-Ahle Bait

اے شبابِ فصلِ گل یہ چل گئی کیسی ہوا
کٹ ریا ہے لہلہاتا بوستانِ اہلبیت

Aey shabab-e-fasl gul yeh chal gai kaisi hawa
Kat raha hay lelehata bostan-e-Ahle Bait

کس شقی کی ہے حکومت ہائے کیا اندھیر ہے
دن دھاڑے لٹ رہا ہے کاروانِ اہلبیت

Kis shaqi ki hay hakomat ha-ee kiya andhair hay
Din dehare lut raha hay Karwan-e-Ahle Bait

ahl-e-bait poem

Karbala Poems | Muharram Poems

خشک ہو جا خاک ہو کر خاک میں مل جا فرات
خاک تجھ پر دیکھ تو سوکھی زبانِ اہلبیت

Kushk ho ja khak ho kar khak main mil ja Furat
Khak tujh par,daikh to sookhi zaban-e-Ahle Bait

خاک پر عباس و عثمانِ علمبردار ہیں
بیکسی اب کون اٹھائے گا نشانِ اہلبیت

Khakh per Abbas-O-Usman Alambardar Hain
Be kasi ab koun uthaye ga Nishan-e-Ahle Bait

تیری قدرت جانور تک آب سے سیراب ہوں
پیاس کی شدت میں تڑپے بے زبانِ اہلبیت

Teri qudrat janwar tak aab say serab hoo
Auo piyas ki shidat main tarpy bayzuban-e-Ahle Bait

قافلہ سالار منزل کو چلے ہیں سونپ کر
وارثِ بے وارثوں کو کاروانِ اہلبیت

Qafla salar manzil ko chaly hay sonp kar
waris bay warisa ko karwan-e-Ahle Bait

ahl-e-bait poetry

Karbala Poems | Muharram Poems

فاطمہ کے لاڈلے کا آخری دیدار ہے
حشر کا ہنگامہ برپا ہے میانِ اہلبیت

Fatima (R.A) kay laadly ka aakhri didar hay
Hashr ka hangama barpa hay mayan-e-Ahle Bait

وقتِ رخصت کہہ رہا ہے خاک میں ملتا سہاگ
لو سلامِ آخری اے بیوگانِ اہلبیت

Waqt akhir keh raha hay khak main milta suhag
Ke loo salam aakhri aay bewgan-e-Ahle Bait

ابرِ فوجِ دشمناں میں اے فلک یوں ڈوب جائے
فاطمہ کا چاند مہرِ آسمانِ اہلبیت

Abre faoj dushmanan me ae falaq youn doob jaye
Fatimah ka chand mehr asman-e-Ahle Bait

کس مزے کی لذ تیں ہیں آبِ تیغِ یار میں
خاک و خوں میں لوٹتے ہیں تشنگانِ اہلبیت

Kis maze ki lazzatein hain ab e taigh e yar me
Khakh o khoon me laote Hain tishnagan-e-Ahle Bait

poems about karbala

Karbala Poems | Muharram Poems

باغ جنت چھوڑ کر آئے ہیں محبوبِ خدا
اے زہے قسمت تمھاری کشتگانِ اہلبیت

Bagh e jannat chodh kar aye hain Mehboob-e-Khuda
Ae zahe qismat tumhari kushtgan-e-Ahle Bait

حوریں بے پردہ نکل آئی ہیں سر کھولے ہوئے
آج کیسا حشر ہے برپا میانِ اہلبیت

Hoorein be pardah nikal ayi hain sar khole hue
Aj kaisa hashr he barpa mayan-e-Ahle Bait

کوئی کیوں پوچھے کسی کو کیا غرض اے بیکسی
آج کیسا ہے مریض نیم جانِ اہلبیت

Koi kyon puche kisi ko kya garaz ae Bbekasi
Aj kaisa he mareez e meem jan-e-Ahle Bait

گھر لٹانا جان دینا کوئی تجھ سے سیکھ جائے
جانِ عالم ہو فدا اے خاندانِ اہلبیت

Ghar lutana jan dena koi tujh se seekh jaye
Jan e alam ho fida ae khandan-e-Ahle Bait

muharram poems in urdu

Karbala Poems | Muharram Poems

سر شہیدانِ محبت کے ہیں نیزوں پر بلند
اور اونچی کی خدا نے قدر و شانِ اہلبیت

Sar shaheedan e muhabbat kay hain nezon per buland
Aur uoonchi ki khuda ne qadr o shan-e-Ahle Bait

دولتِ دیدار پائی پاک جانیں بیچ کر
کربلا مین خوب ہی چمکی دوکانِ اہلبیت

Daolat e deedar payi pak janein bech kar
Karbala me khoob hi chamki dukan-e-Ahle Bait

زخم کھانے کو تو آبِ تیغ پینے کو دیا
خوب دعوت کی بلا کر دشمنانِ اہلبیت

Zakhm khane ko to aab e taigh pine ko diya
Khoob dawat ki bula kar dushmanan-e-Ahle Bait

اپنا سودا بیچ کر بازار سونا کر گئے
کونسی بستی بسائی تاجرانِ اہلبیت

Apna soda baich kar bazaar soona kar gaee
Kon si basti basaee tajran-e-Ahle Bait

poems on karbala

Karbala Poems | Muharram Poems

اہلِ بیتِ پاک سے گستاخیاں بے باکیاں
لعنۃ اللہ علیکم دشمنانِ اہلبیت

Ahle Bait-e-Pak se gustakhiyan be bakiyan
Lanatullahi Alaykum dushmanan-e-Ahle Bait

اُن کے گھرمیں بے اجازت جبرئیل آتے نہیں
قدر والے جانتے ہیں قدر و شانِ اَہل بیت

Inke ghar mein be ijazat Jibrael aate nahi
Qadr wale jante hain qadr shane-e-Ahle Bait

بے ادب گستاخ فرقے کو سنا دو اے حسؔن
یوں کہا کرتے ہیں سنی داستانِ اہلبیت

Be adab gustaakh firke ko sunade ae hasan
Youn kaha karte hain Sunni daastaan-e-Ahle Bait

Karbala Poem – 2

Salam-e-Karbala

karbala poem lakhon salam

Karbala Poems | Muharram Poems

جن کا جھولا فرشتے جھلاتے رہے
لوریاں دے کے نوری سلاتے رہے

جن پہ سفّاک خنجر چلاتے رہے
جن کو کاندھوں پہ آقابٹھاتے رہے

کر لیا نوش جس نے شہادت کا جام
اس حسینؑ ابنِ حیدر پہ لاکھوں سلام

Jin ka jhula farishtey jhulate rahe
Lohrian deke noori sulaate rahe

Jin pe safak khanjer chalate rahe
Jin ko kandon pe Aaqa(S.W) bethate rahe

Ker leya noosh jis jis ne shahadat ka jaam
Us Hussain(A.S) pe lakhon salam.

hussain ibn e hader pe lakhon salam

Karbala Poems | Muharram Poems

جن کا نانا دو عالم کا مختار ہے
جو جوانانِ جنّت کے سردار ہے

جن کا سر دشت میں زیرِ تلوار ہے
جو سراپائے محبوبِ غفّار ہے

کر لیا نوش جس نے شہادت کا جام
اس حسینؑ ابنِ حیدر پہ لاکھوں سلام

Jin ka Naana (S.W) do aalam ka mukhtar ha
Jo jwanane janat ke sardar ha

Jin ka sar dasht men zere talwar ha
Jo sarapa e mehboob ghafar ha

Ker leya noosh jis jis ne shahadat ka jaam
Us Hussain(A.S) pe lakhon salam.

muharram salam

Karbala Poems | Muharram Poems

جن کو دھوکے سے کوفہ بلایا گیا
جن کو بیٹھے بٹھائے ستایاگیا

جن کی گردن پہ خنجر چلایا گیا
جن کے بچوں کو پیاسے رلایا گیا

جن کے لاشِ پہ گھوڑا دوڑایا گیا
اس حسینؑ ابنِ حیدر پہ لاکھوں سلام

Jin ko dhoke se Kufa bulaya gaya
Jin ko bethe bethay satya gaya

Jin ke gardan pe khanjar chalaya gaya
Jin ke bachchon ko pyaasa rulaya gaya

Jin ke lasha pe ghura doraya gaya
Us Hussain ibne Haider pe lakhon salam.

panjtan pak poems

Karbala Poems | Muharram Poems

اپنے ﻧﺎﻧﺎ ﮐﺎ ﻭﻋﺪﮦ ﻭﻓﺎ ﮐﺮ ﺩﯾﺎ
ﺟﺲ ﻧﮯ ﺣﻖ ﮐﺮﺑﻼ ﻣﯿﮟ ﺍﺩﺍ ﮐﺮ ﺩﯾﺎ

گھر کا گھر ﺳﭙﺮﺩ ﺧﺪﺍ ﮐﺮ ﺩﯾﺎ
ﺟﺲ ﻧﮯ ﻧﯿﺰﮮ ﭘﮧ ﺑﮭﯽ ﻗﺮﺍﻥ ﭘﮍﮪ ﺩﯾﺎ

کر لیا نوش جس نے شہادت کا جام
ﺍُﺱ ﺣﺴﯿﻦ ﺍﺑﻦ ﺣﯿﺪﺭ پہ ﻻﮐﮭﻮﮞ ﺳﻼﻡ

Jis ne Naana (S.A.W) ka wada wafa ker dia
Jis ne haq karbala mein ada ker dia

Apne ghar ko suparde khuda kar diya
Jis ne neze par bhi Quran par diya

Ker leya noosh jis ne shahadat ka jaam
Us Hussain ibne Haider pe lakhon salam.

slama ya hussain

Karbala Poems | Muharram Poems

جن کو دوشِ نبی پر بیٹھایا گیا
جن کا جنت سے جوڑا منگایا گیا

جن کو تیروں سے چھلنی کرایا گیا
جن کے بیٹے کو قیدی بنایا گیا

اس حسینؑ ابنِ حیدر پہ لاکھوں سلام

Jin ko doshe Nabi (S.A.W) per bethaya gaya
Jin ka janat se joora mangaya gaya

Jin ko teeron se chalni kerya gaya
Jin ke bete ko qadi banaya gaya

Us Hussain ibne Haider pe lakhon salam.

Karbala Poem – 3

Ali Ka Ha

منظر فضائے دہر میں سارا علی کا ہے
جس سمت دیکھتا ہوں نظارہ علی کا ہے

Manzer qaza e dehar mein sara Ali (A.S) ka ha
Jis simat dekhta hon nazara Ali ka ha (A.S) ha.

مرحب دو نیم ہے سر خیبر پڑا ہوا
اٹھنے کا اب نہیں کہ یہ مارا علی کا ہے

Marhab do neem ha sar khebar para hoa
Uthne ka ab nahi kh ye mara Ali (A.S) ka ha.

کُل کا جمال جزو کے چہرے سے ہے عیاں
گھوڑے پہ ہیں حسین نظارہ علی کا ہے

Kul ka jamal juz ke chehre se ha ayan
Ghurain hain ye haseen nazara Ali (A.S) ka ha.

اصحابی کالنجوم کا ارشاد بھی بجا
سب سے مگر بلند ستارا علی کا ہے

Ashabi kalnajoom ka irshad bhi baja
Sab se magar bulan sitara Ali (A.S) ka ha.

ہم فقر مست چاہنے والے علی کے ہیں
دل پر ہمارے صرف اجارا علی کا ہےِ

Ham fakar mast chahne wale Ali ke Hain
Dil per hamare sirf ujara Ali (A.S) ka ha.

اہلِ ہوس کی لقمہ تر پر رہی نظر
نان جویں پہ صرف گزارا علی کا ہے

Ahle hawas ke lukma tar per rahi nazar
Nan jawain pe sirf guzara Ali (A.S) ka ha.

تم دخل دے رہے ہو عقیدت کے باب میں
دیکھو معاملہ یہ ہمارا علی کا ہے

Tum dakhal de rahy ho aqeedat ke baab mein
Dekho muamla ye hamara Ali (A.S) ka ha.

اے ارض پاک تجھ کو مبارک کہ تیرے پاس
پرچم نبی کا چاند ستارا علی کا ہے

Ae Arz-e-Pak tujh ko mubarak kh tere pas
Parcham Nabi (S.A.W) ka chand sitara Ali (A.S) ka ha.

آثار پڑھ کے مہدی دوراں کے یوں لگا
جیسے ظہور وہ بھی دوبارہ علی کا ہے

Aasar par ke mehdi doran ke youn laga
Jese zahoor woh bhi dobara Ali (A.S) ka ha.

تو کیا ہے اور کیا ہے تیرے علم کی بساط
تجھ پر کرم نصیر یہ سارا علی کا ہے

پیر سید نصیر الدین نصیر جیلانی رحمتہ اللہ علیہ

Tu kia ha aur kia ha tere ilm ki basat
Tujh per karam Naseer ye sara Ali (A.S) ka ha.

Karbala Poem – 4

Waadhe Nibha Diye Hain

سید نے کربلا میں وعدے نبھا دئے ہیں
دین محمدی کے گلشن کھلا دیئے ہیں

Syed Ne Karbala Mein Waadhe Nibha Diye Hain,
Deen E Muhammadiee Ke Gulshan Kilya Diye Hain.

بولے حسین ؓ مولا تیری رضا کی خاطر
اک اک کر کے میں نے ہیرے لٹا دیے ہیں

Bole Hussain Maula, Teri Raza Ki Khaatir,
Ikh Ikh Kar Ke Maine Heereh Luta Diye Hain.

دین نبی پہ واری اکبر ؓ نے بھی جوانی
عبّاس ؓ نے بھی اپنے بازو کٹا دیے ہیں

Deen-E-Nabi Pe Waari, Akbar Ne Bhi Jawaani,
Abbas Ne Bhi Apne Bazoo Kata Diye Hain.

زینب ؓ کے باغ میں بھی دو پھول تھے مہکتے
زینب ؓ نے وہ بھی دونوں راہ خدا دیے ہیں

Zainab Ke Baag Mein Bhi Do Pool Teh Mehkhateh,
Zainab Ne Wo Bhi Donoh Raah-E-Khuda Diye Hain.

زھراء ؓ کے ناز پالے پھولوں پہ سونے والے
کربل کی خاک میں وہ ہیرے لٹا دیے ہیں

Zahra ke Naaz Paale Phoolon Pe Soonay Waale
Karbal Ki Khaak Main Woh Heere Rula Diye Hain.

اک بچ گیا بھا غنچہ اس کو بھی پیش کر کے
سید ؓ نے جھاڑ کے یوں دامن دکھا دیے ہیں

Ek Bach Gia Tha Guncha Us Ko Bhi Peshc Ker Ke,
Sayed Ne Jhar Ke Youn Daman Dekha Diye Hain.

شبیر ؓ کی ہی ایسی پر درد داستاں ہے
دل پتھروں کے واللہ جس نے ہلا دیے ہیں

Shabeer Ke Hi Aysi Pr Dard-e-Dastan Hai,
Dil Pathron Ke Wa-Allah Jis Ne Hila Diye Hain.

بخشش ہے اس کی لازم سید ؓ کے غم میں حافظ
دو چار آنسو رو کر جس نے بہا دیے ہیں

Bakhshish Hai Unki Laazim, Syed Ke Gham Mein Hafiz,
Do Chaar Ansoo Roh Kar Jisne Baha Diye Hain.

سید نے کربلا میں وعدے نبھا دئے ہیں
دین محمدی کے گلشن کھلا دیئے ہیں

Syed Ne Karbala Mein Waadhe Nibha Diye Hain,
Deen-E-Muhammadi Ke Gulshan Kilya Diye Hain.

Karbala Poem – 5

Dastaan-e-Karbala

تڑپ اُٹھتا ہے دِل، لفظوں میں دُہرائی نہیں جاتی
زباں پر کربلا کی داستاں لائی نہیں جاتی

Tarp uttta hai dil lafzoon mai dhorai nahi jati
Zaban pe karbala ki dataan lai nahi jati

حُسینؑ ابنِ علیؑ کے غم میں ہُوں دُنیا سے بیگانہ
ہجُومِ خَلق میں بھی میری تنہائی نہیں جاتی

Hussain ibn e ali ke gham mai hon dunya se begana
Hujoom e khalq mai bhi meri tanhai nahi jati

اُداسی چھا رہی ہے رُوح پر شامِ غرِیباں کی
طبیعت ہے کہ بہلانے سے بہلائی نہیں جاتی

Udaasi chaa rahi hai rooh per sham e ghareeban ki
Tabiyat hai ke bhailane se bhelai nahi jati

کہا عباسؑ نے افسوس بازُو کٹ گئے میرے
سکینہؑ تک یہ مَشکِ آب لے جائی نہیں جاتی

Kaha ABBAS ne afsoos bazo kat gaie mere
Sakina tak ye mushq e aab le jai nahi jati

کہا شبِّیرنےعبّاس! تم مجھ کو سہارا دو
کہ تنہا لاشِ اکبرؑ مجھ سے دفنائی نہیں جاتی

Kaha shabbir ne ABBAS tum mujh ko sahara do
Ke tanha lash e akbar mujh se dafnai nahi jati

حسینیّت کو پانا ہے تو ٹکّر لے یزیدوں سے
یہ وہ منزل ہے جو لفظوں میں سمجھائی نہیں جاتی

Hussainiyat ko pana hai tou takkar le yazeedon se
Ye wo manzil hai jo lafzoon mai samjhai nahi jati

نصیرؔ آخر عداوت کے بھی کچھ آداب ہوتے ہیں
کسی بیمار کو زنجِیر پہنائی نہیں جاتی

Naseer akhir adowat ke bhi kuch adab hote hain
Kisi bemaar ko zanjeer pehnai nahi jati

Muharram Quotes and Poetry 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *